القرآن الكريم مع الترجمة

    الفهرس    
54. سورة الْقَمَر
اقْتَرَبَتِ السَّاعَةُ وَانشَقَّ الْقَمَرُ(1)
قیامت قریب آپہنچی اور چاند دو ٹکڑے ہوگیاo
The Last Hour has drawn near and the moon has split into two.
وَإِن يَرَوْا آيَةً يُعْرِضُوا وَيَقُولُوا سِحْرٌ مُّسْتَمِرٌّO(2)
اور اگر وہ (کفّار) کوئی نشانی (یعنی معجزہ) دیکھتے ہیں تو مُنہ پھیر لیتے ہیں اور کہتے ہیں کہ (یہ تو) ہمیشہ سے چلا آنے والا طاقتور جادو ہےo
And if they (the disbelievers) see a Sign (miracle) they turn their faces away and say: ‘This is the powerful magic ever running down through ages.’
وَكَذَّبُوا وَاتَّبَعُوا أَهْوَاءَهُمْ وَكُلُّ أَمْرٍ مُّسْتَقِرٌّO(3)
اور انہوں نے (اب بھی) جھٹلایا اور اپنی خواہشات کے پیچھے چلے اور ہر کام (جس کا وعدہ کیا گیا ہے) مقررّہ وقت پر ہونے والا ہےo
And they have rejected (the Truth even now) and followed their vain desires. And everything (that has been promised) is to take place at the appointed time.
وَلَقَدْ جَاءَهُم مِّنَ الْأَنبَاءِ مَا فِيهِ مُزْدَجَرٌO(4)
اور بیشک اُن کے پاس (پہلی قوموں کی) ایسی خبریں آچکی ہیں جن میں (کفر و نافرمانی پر بڑی) عبرت و سرزنش ہےo
And indeed the news has come to them (of the earlier communities) containing lessons of warning and admonition (on disbelief and disobedience).
حِكْمَةٌ بَالِغَةٌ فَمَا تُغْنِ النُّذُرُO(5)
(یہ قرآن) کامل دانائی و حکمت ہے کیا پھر بھی ڈر سنانے والے کچھ فائدہ نہیں دیتےo
(This Qur’an) is perfect intellect and reason. Are the Warners still not of any benefit?
فَتَوَلَّ عَنْهُمْ يَوْمَ يَدْعُ الدَّاعِ إِلَى شَيْءٍ نُّكُرٍO(6)
سو آپ اُن سے منہ پھیر لیں، جس دن بلانے والا (فرشتہ) ایک نہایت ناگوار چیز (میدانِ حشر) کی طرف بلائے گاo
So turn your face away from them. The Day when the caller (angel) will call towards the most detestable thing (the expanse of the last assembly),
خُشَّعًا أَبْصَارُهُمْ يَخْرُجُونَ مِنَ الْأَجْدَاثِ كَأَنَّهُمْ جَرَادٌ مُّنتَشِرٌO(7)
اپنی آنکھیں جھکائے ہوئے قبروں سے نکل پڑیں گے گویا وہ پھیلی ہوئی ٹڈیاں ہیںo
With eyes cast down, they will come out of their graves like scattered locusts,
مُّهْطِعِينَ إِلَى الدَّاعِ يَقُولُ الْكَافِرُونَ هَذَا يَوْمٌ عَسِرٌO(8)
پکارنے والے کی طرف دوڑ کر جا رہے ہوں گے، کفّار کہتے ہوں گے: یہ بڑا سخت دِن ہےo
Rushing towards the caller running. The disbelievers would say: ‘This is a very hard Day.’
كَذَّبَتْ قَبْلَهُمْ قَوْمُ نُوحٍ فَكَذَّبُوا عَبْدَنَا وَقَالُوا مَجْنُونٌ وَازْدُجِرَO(9)
اِن سے پہلے قومِ نوح نے (بھی) جھٹلایا تھا۔ سو انہوں نے ہمارے بندۂ (مُرسَل نُوح علیہ السلام) کی تکذیب کی اور کہا: (یہ) دیوانہ ہے، اور انہیں دھمکیاں دی گئیںo
The People of Nuh (Noah) also denied before this. So they belied Our servant (Nuh — Noah, the Messenger) and said: ‘(He) is mad.’ And he was given threats.
فَدَعَا رَبَّهُ أَنِّي مَغْلُوبٌ فَانتَصِرْO(10)
سو انہوں نے اپنے رب سے دعا کی کہ میں (اپنی قوم کے مظالم سے) عاجز ہوں پس تو انتقام لےo
So he prayed to his Lord: ‘I am powerless (before the transgressions of my people) so exact revenge.’
التالي



جميع الحقوق محفوظة © arab-exams.com
  2014-2019
operation time = 0.029090881347656